Armed action by any organization or group 37

ریاست کے علاوہ کسی بھی ادارے یا گروہ کی مسلح کارروائی ناقابل قبول ہے، آرمی چیف نے واضح اعلان کردیا

سٹاف رپورٹ (تازہ اخبار ،پی این پی نیوز ایچ ڈی)

آرمی چیف جنرل عاصم منیر نے کہا ہے کہ یاست کے سوا کسی بھی ادارے یا گروہ کا طاقت کا استعمال اورمسلح کارروائی ناقابل قبول ہے اور بالخصوص اقلیتوں اور کمزور طبقوں کے خلاف عدم برداشت اور انتہاپسند رویئے کی کوئی جگہ نہیں.
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل عاصم منیر سے علمائے کرام و مشائخ نے ملاقات کی اور علمائے کرام و مشائخ نے متفقہ طور پر انتہا پسندی، دہشت گردی اور فرقہ واریت کی مذمت کی۔اس موقع پر آرمی چیف کا کہنا تھاکہ بغیر کسی مذہبی،صوبائی یا کسی اور امتیاز کے پاکستان تمام پاکستانیوں کا ہے اور ریاست کے سوا کسی بھی ادارے یا گروہ کا طاقت کا استعمال اورمسلح کارروائی ناقابل قبول ہے.
انہوں نے کہا کہ کسی کے خلاف عدم برداشت اور انتہاپسند رویئے کے لیے کوئی جگہ نہیں، بالخصوص اقلیتوں اورکمزورطبقوں کے خلاف عدم برداشت اور انتہاپسند رویئے کی کوئی جگہ نہیں۔علمائے کرام و مشائخ نے ملک میں رواداری، امن کی ریاستی کوششوں اور سیکیورٹی فورسز کی انتھک کوششوں کیلئے اپنی بھرپورحمایت جاری رکھنے کا عزم کیا اور کہا کہ اسلام امن اور ہم آہنگی کا مذہب ہے، بعض عناصر کی مذہب کی مسخ شدہ تشریحات صرف ان کے ذاتی مفادات کیلئے ہیں.
علمائے کرام نے کہا کہ بعض عناصر کی مسخ شدہ تشریحات کا اسلامی تعلیمات سے کوئی تعلق نہیں ہے۔آرمی چیف نے انتہا پسندوں، دہشت گردوں کے گمراہ کن پروپیگنڈے کے خاتمے کیلئے علماء کے فتوے ’پیغام پاکستان‘ کو سراہا۔ آرمی چیف نے علماء ومشائخ سےگمراہ کن پروپیگنڈے کی تشہیر کے تدارک اوراندرونی اختلافات کو دورکرنے پر زور دیا۔جنرل عاصم منیر نے قرآن وسنت کی تفہیم اورکردار سازی کیلئے نوجوانوں کو راغب کرنے میں علما کءے کردار کی نشاندہی بھی کی.
فورم نے متفقہ طورپرغیرقانونی مقیم غیرملکیوں کی وطن واپسی، حکومت پاکستان کے ایک دستاویزی نظام (پاسپورٹ)کے نفاذ، انسداد سمگلنگ، ذخیرہ اندوزی، بجلی چوری کے خلاف اقدامات کی حمایت کی۔فورم نے افغان سرزمین سے پیدا دہشت گردی پرپاکستان کے مؤقف اورتحفظات کی مکمل حمایت کی اور پاکستان کے تحفظات کو دور کرنے کیلئے افغانستان پرسنجیدہ اقدامات کرنے پرزور دیا۔ فورم نے غزہ میں جاری جنگ نہتے فلسطینیوں پر مظالم پر بھی غم وغصے کا اظہار کیا اور نہتے فلسطنیوں پر مظالم کو انسانیت کے خلاف جرائم قرار دیا.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں