حکومت ترسیلاتِ زر بھیجنے والے بیرونِ ملک مقیم پاکستانیوں کو مزید سہولیات دینے کیلئے پُر عزم 231

وزیر اعظم عمران خان نے ملک میں معاشی تبدیلی کے لیے بڑے شعبوں میں حکومتی اصلاحات کا جائزہ لینے کے لئےاقتصادی مشاورتی کونسل کے اجلاس کی صدارت کی

(سٹاف رپورٹ،تازہ اخبار،پاک نیوز پوائنٹ )

وزیر اعظم کو آگاہ کیا گیا کہ اقتصادی مشاورتی کونسل کی جانب سے اصلاحات کے لیے چودہ (14) ترجیحی شعبوں کی نشاندہی کی گئی ہے تاکہ اگلے تین سالوں میں جی ڈی پی (GDP) کی شرح نمو کو 6 فیصد اور جی ڈی پی اور سرمایہ کاری کے تناسب (GDP to Investment ratio) کو موجودہ 15 فیصد سے بڑھا کر 20 فیصد تک لے جایا جا سکے۔
ان چودہ (14) شعبوں میں مالی استحکام اور پائیدار ترقی ، مکانات اور تعمیرات ، مالیاتی شعبہ اور قرضوں کا انتظام ، نجکاری ، گھریلو تجارت ، گردشی قرضہ ، انفارمیشن ٹیکنالوجی ، صنعت کاری ، توانائی اور پٹرولیم ، اخراجات ، زراعت ، CPEC ، قیمتوں کا استحکام ، اور سماجی تحفظ شامل ہیں۔وزیراعظم نے اس بات پر زور دیا کہ حکومت خاص طور پر گیس اور معدنیات کے شعبوں پر توجہ مرکوز کرنے کے علاوہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو معیشت کےترکیحی شعبوں میں سرمایہ کاری کی ترغیب دے رہی ہے’۔وزیراعظم نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ وہ سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کے لیے اصلاحات کے عمل کو تیز کریں ، سرکاری ملکیتی کاروباری اداروں (SOEs) کو بہتر بنائیں ، کاروبار میں آسانی کو یقینی بنائیں ، برآمدات میں تنوع اور درآمدات کے متبادل تلاش کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں