سی پیک منصوبے پرکام جاری رہےگا۔وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی 267

مسئلہ کشمیر کو حل کئے بغیر خطے میں امن قائم نہیں ہو سکتا،وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی

(سٹاف رپورٹ،تازہ اخبار،پاک نیوز پوائنٹ )

بھارت کی جانب سے بھارت کے غیر قانونی زیر تسلط جموں و کشمیر میں آبادیاتی تناسب کو تبدیل کرنے کی گھنائونی سازش مکمل طور پر بے نقاب ہو چکی ہے، عالمی برادریبھارت کے غیر قانونی زیر تسلط جموں و کشمیر میں جاری مظالم کو رکوانے کیلئے اپنا موثر ادا کرے۔
یہ باتیں انہوں نے برطانوی ہائوس آف لارڈز کے رکن لارڈ قربان حسین کی جموں وکشمیر تحریک، حق خودارادیت انٹرنیشنل کے چیئرمین راجہ نجابت حسین سے بات چیت کرتے ہوئے کہیں جنہوں نے جمعہ کو وزارتِ خارجہ میں ان سے ملاقات کی۔ملاقات کے دوران بھارت کے غیر قانونی زیر تسلط جموں و کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے خلاف برطانوی پارلیمنٹ اور بین الاقوامی فورمز پر سفارتی کاوشوں کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا گیا۔
وزیر خارجہ نے کہا کہ برطانوی پارلیمنٹ سمیت دنیا کی اہم پارلیمان میں مقبوضہ جموں و کشمیر کی بگڑتی ہوئی صورتحال پر بحث، عالمی برادری کی جانب سے ہمارے موقف کی توثیق ہے۔انہوں نے کہا کہ بھارت سرکار کے مقبوضہ کشمیر میں 5 اگست 2019 کے یک طرفہ اور غیر آئینی اقدامات کو دنیا بھر میں بسنے والے کشمیریوں نے یکسر مسترد کر دیا ہے جبکہ بھارت کی ہندوتوا پالیسیوں کے باعث ہندوستان میں مقیم تمام اقلیتیں عدم تحفظ کا شکار ہیں ۔
شاہ محمود قریشی نے کہا کہ گزشتہ روز 5 اگست کو، کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی اور بھارتی یکطرفہ اقدامات کے خلاف پورے پاکستان میں احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں۔پاکستان، بھارت سمیت خطے کے تمام ممالک کے ساتھ پر امن تعلقات کا خواہاں ہے۔اقوام متحدہ، سلامتی کونسل کی قراردادوں اور کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کو حل کیے بغیر خطے میں امن قائم نہیں ہو سکتا۔وزیر خارجہ نے کہا کہ خطے میں قیام امن کیلئے بھارت کو مقبوضہ جموں و کشمیر میں اٹھائے گئے 5 اگست 2019 کے یکطرفہ اقدامات کو واپس لینا ہو گا۔وزیر خارجہ نے سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ اور صدر سلامتی کونسل کو لکھے گئے حالیہ خط کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان، کشمیری بھائیوں کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی معاونت جاری رکھے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں