وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کا معروف سائنسدان ‏ڈاکٹر عبدالقدیر خان کے انتقال پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار 242

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف کا ایل این جی کی قیمتوں میں اضافے اور ملک میں توانائی کی ممکنہ قلت کے خطرات پر اظہار تشویش

(سٹاف رپورٹ،تازہ اخبار،پاک نیوز پوائنٹ )

ڈالر،،ایل این جی، مہنگائی , بے روزگاری تاریخ کی بلند ترین سطح پر ہے ، حکومت کے پاس کوئی حکمت عملی نہیں عالمی اور داخلی حالات مہنگائی سے پہلے سے پسے عوام کا زندہ رہنا ناممکن بنارہے ہیں، سنجیدگی سے نہ سوچا تو وقت ہاتھ سے نکل جائے گا ہر روز بگڑتے حالات تقاضا کررہے ہیں کہ آنکھیں کھول کر دیکھا جائے، ملک اور عوام کا سوچا جائے ایشیاءمیں ایل این جی کی سپاٹ قیمتوں میں اضافے نے موجودہ بے سمت حکومت کی کوتاہ نظری بے نقاب کردی ہے
وقت نے ثابت کیا کہ نوازشریف کے ایل این جی کی خریداری کے طویل المدت معاہدے درست فیصلہ تھا نوازشریف نے ایل این جی کا 10 ڈالر پر معاہدہ کیاتھا، آج ایل این جی کی قیمت 56 ڈالر پر پہنچ چکی ہے ایشیائی ایل این جی سپاٹ قیمتوں کے 56 ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو پر پہنچنے سے عمران نیازی حکومت کا ایک اور غلط فیصلہ بے نقاب ہوا ہے ایل این جی کے طویل المدت معاہدے نہ کرنے کے حکومتی فیصلے کی قیمت آج ملک اور عوام کو اداکرنا پڑ رہی ہے
اگر طویل المدت معاہدے برقرار رکھے جاتے تو آج قوم کو مہنگی ایل این جی اور توانائی کی قلت سے بچایاجاسکتا تھا سیاسی انتقام اور مسلم لیگ (ن) سے عداوت کی بناءپر موجودہ حکومت سیمسٹر بنیادوں پر فیصلے کرتی ہے
وزیر، مشیر اور عہدیدار بھی سمسٹر پروگرام کے مطابق چل رہے ہیں، کوئی پالیسی نہیں، صرف لوٹ مار جاری ہے
فرنس آئل، ڈیزل اور ایل این جی میں حکومتی کرپشن پر میڈیا نے دہائیاں مچائیں، دستاویزات سامنے آئیں لیکن کوئی کارروائی نہ ہوئی حکومت صرف عوام کو لوٹ رہی ہے، یہ سلسلہ یوں ہی جاری رہا تو تباہ حال معیشت میں قوم پیٹ پر پتھرباندھ کر روئے گی
توانائی کی قیمت میں بتدریج اضافہ مہنگائی سے مرتی عوام پر ایک ناقابل برداشت بوجھ ثابت ہوگا.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں