Famous Turkish chef Borak Özdemir's lawsuit against his father 144

مشہور ترک شیف بوراک اوزدمیر کا اپنے والد کے خلاف مقدمہ

سٹاف رپورٹ (تازہ اخبار پی این پی نیوز ایچ ڈی)
ین الاقوامی شہرت یافتہ شیف نے ٹیوٹر پر اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ ’والد کے خلاف دھوکہ دہی کا مقدمہ دائر کیا ہے کیونکہ انہوں نے ان کے مشہور ریستوران چین کے ملکیتی حقوق خفیہ طور پر کسی اور کو فروخت کر دیے۔‘
انہوں نے اپنے پیغام میں اس امر کی بھی یقین دہانی کرائی کہ وہ پکوان سازی کی دنیا میں اب انفرادی طور پر اپنا کام جاری رکھیں گے۔
سوشل میڈیا پروائرل ہونے والے ویڈیو کلپ میں بوراک کہہ رہے ہیں کہ ’اب استنبول میں صرف ایک ریستوان کے علاوہ کوئی دوسرا ہوٹل نہیں رہا.
انہوں نے اپنے صارفین سے مزید کہا کہ ’میں امید کرتا ہوں کہ میرے نام اورشہرت کو چرانے والوں سے ہوشیار رہیں گے اوردھوکہ نہیں کھائیں گے۔‘
انہوں نے والد سے اختلاف کا سبب بتاتے ہوئے کہا کہ ریستوران کے حقوق ان کے علم میں لائے بغیرایک غیرملکی تاجر کو فروخت کرنا درست نہیں تھا۔
واضح رہے بوراک کا اپنے والد سے اختلاف اس وقت شروع ہوا جب ترکیہ میں تباہ کن زلزلے کے متاثرین کی امداد کے لیے بوراک نے بڑھ چڑھ کرحصہ لیا جس پر انہیں والد کی جانب سے مشکلات اور رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑا.
اپنے آبائی علاقے ھاتائی میں زلزلہ زدگان کی امداد میں رکاوٹیں ڈالنے پر ان کے اپنے والد سے تعلقات کشیدہ ہوتے گئے جس پر انہوں نے علیحدگی اختیار کر لی۔
توقع ہے کہ مقدمہ کی پہلی پیشی کی سماعت ستمبر کے اوائل میں ہو گی۔ مدعی نے یہ بھی مطالبہ کیا ہے کہ جن ریسٹورانٹس کو دھوکے سے لیا گیا ہے وہاں سے ان کا نام اورتصویر ہٹا دی جائے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں