Berlin Report Submissive 66

بزم ادب برلن نے ایک مرتبہ پھر جرمنی میں اردو ادب کے لیے بہترین کارنامہ سرانجام دے دیا بیک وقت پانچ ادبی کتب کا رسم اجراء اور ادبی مشاعرے کا اہتمام کیا گیا

برلن رپورٹ مطیع اللہ
بزم ادب برلن نے ایک مرتبہ پھر جرمنی میں اردو ادب کے لیے بہترین کارنامہ سرانجام دے دیا بیک وقت پانچ ادبی کتب کا رسم اجراء اور ادبی مشاعرے کا اہتمام کیا گیا

بزم ادب برلن کی جانب سے جرمنی کے دارلحکومت برلن کے ایشیائی آبادی کےعلاقے ضلع ویڈنگ کے معروف یوتھ کلچرل سینٹر میں سید جمیل الدین احمد کی زیر صدارت منعقدہ رسم اجراء کتب و مشاعرے کے موقع پر جرمنی کے معروف شاعروں کے پانچ کتب کا رسم اجراء کیا گیا جس میں معروف لکھاری رشید خاں رشی خان کے ناول بت پرستوں کی نئی نسلیں،ڈاکٹر عشرت معین سیما کے تبصرےوتزکرے ،انور ظہیر رہبر کے کتاب کالم پردیسی کی قلم سے، پاکستان کے نامور شاعرہ ماریہ مہ وش کی شاعری مجموعےٹوٹم اور بزم ادب برلن کے جنرل سیکرٹری اردو کے پروفیسر سرور غزالی کے سفر ہے شرط کی کتب رسم اجراء کی گئی،
رشید خان کے ناول بت پرستوں کی نئی نسلیں پر مختلف لکھاریوں کا مقالہ عامر عزیز نے پڑھ کر سنایا جبکہ تقریب میں ماریہ مہ وش کے کتاب ٹوٹم پر مقالہ اور نئے کتب سے اقتباسات بھی پیش کئے گئے تقریب کے موقع پر پاکستان، سوئیڈن ناروے جرمنی سمیت برلن بھر کے معروف شاعروں نے ادبی محفل کو رونق بخشا،
کتب کے رسم اجراء کے بعد خواجہ حنیف تمنا کی صدرات میں مشاعرے کا اہتمام کیا گیا اس موقع پر مہمان خصوصی پروفیسر ڈاکٹر زاہد حسین نے پنجابی،رانا افتخار ثاقب ڈاکٹر عشرت معین سیما، انور ظہیر رہبر، ڈاکٹر طاہر رباب، سرور ظہیرغزالی عرشی خان، شیخ ریاض اور عامر عزیز سمیت دیگر نے اپنے کلام پیش کئے جبکہ مشاعرے کے صدر خواجہ حنیف تمنا نےاہنے بہترین انداز بیاں پر مشاعرہ لوٹ لیا

اس موقع پر برلن کے سیاسی و سماجی کارکنان کی بڑی تعداد نے شرکت کی
جس میں پاکستان پیپلز پارٹی، مسلم۔لیگ پاکستان تحریک انصاف کے سنئیر ارکان و بزنس مین شامل تھے بزم ادب برلن کے جنرل سیکرٹری سرور غزالی نے صحافیوں و تقریب کے شرکاء شکریہ ادا کیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں