Major progress regarding FATF, Pakistan included in the compliant list 265

ایف اے ٹی ایف کے حوالے سے بڑی پیشرفت،پاکستان کمپلائنٹ لسٹ میں شامل

ایف اے ٹی ایف کے حوالے سے بڑی پیشرفت،پاکستان کمپلائنٹ لسٹ میں شامل
سٹاف رپورٹ
پاکستان نے ایف اے ٹی ایف کی 40 میں سے 31 سفارشات کے مطابق کمپلینٹ ریٹنگ حاصل کرلی اور پاکستان اب ایشیا پیسیفک گروپ کی توسیع شدہ سے ’فالواپ فہرست‘ میں شامل کرلیا گی.
وزیر توانائی حماد اظہر نے ٹویٹر پر بتایا کہ ایف اے ٹی ایف کی سفارشات پر عمل کرتے ہوۓ پاکستان کی درجہ بندی مزید بہترہوئی ہے.منی لانڈرنگ سے متعلق ایشیاء پیسیفک گروپ (اے پی جی) نے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی موانت کے خلاف فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کی 40 تکنیکی سفارشات میں سے 31 کی پاکستان کی درجہ بندی میں بہتری لائی ہے.
وزیر توانائی حماد اظہر نے کہا کہ ایف اے ٹی ایف کی تاریخ میں کسی بھی ملک کی جانب سے صرف 2 سال میں 20 معیارات میں بہتری بے مثال ہے، یہ وفاق میں 14 اور صوبائی سطح پر 3 قوانین میں بڑے پیمانے پر اصلاحات کا نتیجہ ہے، یہ 20 سے زائد وزارتوں اور محکموں کے نمائندوں پر مشتمل ایف اے ٹی ایم کی پوری ٹیم کی انتھک کوششوں کے ممکن ہوا پاکستان کو جون 2021 میں عالمی معاشی تنظیم کے آئندہ اجلاس تک گرے لسٹ میں رکھا گیا ہے.
وزارت خزانہ حکام کا کہنا ہے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) ایشیا پیسیفک گروپ نے میوچل ایویلوایشن رپورٹ جاری کردی جس میں ایشیا پیسیفک گروپ کی جانب سے پاکستان کی پیش رفت کا اعتراف کیا گیا ہے، گروپ نے کہا کہ پاکستان نے فیٹف کی 40 میں سے 31 سفارشات پر کافی حد تک عمل کرلیا ہے.
ایشیا پیسیفک گروپ نے مزید کہا ہے کہ پاکستان اب ایشیا پیسیفک گروپ کی توسیع شدہ سے، “فالواپ فہرست” میں شامل کرلیا گیا ہے، میوچل ایویلوایشن رپورٹ میں اکتوبر 2020 تک کے اقدامات شامل ہیں.وزارتِ خزانہ نے کہا ہے کہ سفارشات پر عمل درآمد سے پاکستان کی فیٹف معاملات پر سنجیدگی ظاہر ہوتی ہے، پاکستان انسداد منی لانڈرنگ اور اینٹی ٹیررفنانسنگ کےلیے عالمی معیار پر پورا اترا ہے.وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ پاکستان نے 21 سفارشات پر قلیل وقت میں بے مثال اور غیر معمولی اندازمیں عمل درآمد کیا ہے، 2019ء کی رپورٹ کے مطابق پاکستان نے 10 نکات پر عمل درآمد کیا تھا.
وزارتِ خزانہ نے کہا ہے کہ پاکستان نے سفارشات پر عمل درآمد کے لیے 14 وفاقی اور تین صوبائی قوانین میں ترامیم کی ہیں، ان قوانین سے نہ صرف نظام مضبوط ہوا بلکہ استحکام بھی سامنے آیا ہے،پاکستان نے تکنیکی عمل درآمد رپورٹ اکتوبر 2020 میں فیٹف کو جمع کرائی تھی، پاکستان نے ایشیا پیسیفک گروپ میں دوبارہ درجہ بندی کے لیے رپورٹ جمع کرائی ہے.

واضح رہے کہ پاکستان کو سنہ 2018 میں گرے لسٹ میں ڈالتے ہوئے کہا گیا تھا کہ پاکستان ایف اے ٹی ایف کی 40 سفارشات میں سے صرف 13 پر پورا اترتا ہے اور اسے 27 سفارشات پر عملدرآمد کرنے کے لیے ایک سال کا وقت دیا گیا.اور بعد ازاں مزید مہلت ملتی رہی اور پیش رفت ہوتی رہی امید کی جا سکتی ہے کہ اس بار پاکستان کو بلیک لسٹ سے نکال دیا جائے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں