Ahmadpur East. Hundreds of citizens protest in front of DSP Circle Ahmadpur Sharqiyah office against Dhorkot police station. 193

احمد پور شرقیہ. تھانہ دھوڑ کوٹ پولیس کے خلاف ڈی ایس پی سرکل احمد پور شرقیہ کے آفس کے سامنے سینکڑوں کی تعداد میں شہریوں کا احتجاج

(سٹاف رپورٹ،تازہ اخبار،پاک نیوز پوائنٹ )

احمد پور شرقیہ تھانہ دھوڑ کوٹ پولیس نے غریب محنت کش طارق کو رات کے اندھیرے میں پولیس کے 2 ڈالو نے چادر اور چاردیواری کا تقدس کو پامال کر تے ہوئے دھاوا بول دیا طارق کو گھر سے اٹھایا جب وہ اپنے گھر میں سو رہا تھا طارق کی اہل خانہ اور اہل علاقہ کے ہمراہ احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ آج تک اس پہ نا کوئی آیف آئی آر ہے نا کوئی درخواست پولیس تھانہ دھوڑکوٹ دو گاڑیوں میں موجود درجنوں پولیس اہلکار تھے جنہوں نے طارق اور اسکی بیوی کو تشدد کا نشانہ بناتے رہے گھر سے زیور اور پیسے بھی اٹھا لئے طارق کو مارتے پیٹتے پولیس گاڑی میں ڈال کر ساتھ لے گئے جب اس بارے تھانہ دھوڑ کوٹ کے ایس ایچ او سے پو چھا تو انہوں نے کہا ہمیں کچھ معلوم نہیں کہ کونسے تھانے کی پولیس نے اسے گرفتار کیا ہے اہل علاقہ نے بتایا کہ ہم نے اپنی آنکھوں سے ایس ایچ او دھوڑ کوٹ اور کافی پولیس اہلکاروں اور سادہ کپڑوں میں ملبوس چار لوگوں کو دیکھا ہے اور طارق کے ہمسایو نے ایس ایچ او کو دیکھا ایس ایچ او نے دھمکی دی نیچی اتر جاؤ نہیں تو گولی مار دینگے طارق کے والد نے کہا کہ پولیس ہمارے بیٹے کی گرفتاری ظاہر کرنے سے انکاری ہے مظلوم خاندان نے آئی جی پنجاب آر پی او بہاولپور سے مطالبہ کیا ہے انکے بیٹے کو زندہ یا مردہ سامنے لایا جائے اگر ہمارے بیٹے کو سامنے نا لایا گیا تو خود سوزی کر لیں گے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں